ذاکر نائیک کے ادارے کے 18کروڑ روپے کے اثاثہ جات قرق

نئی دہلی:انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے ذاکر نائیک منی لانڈرنگ کیس میں جنوبی ممبئی کے ڈونگری میں واقع اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے نام سے ایک این جی او کے 18کروڑ 37لاکھ روپے کے اثاثہ جات قرق کر لیے۔
اسی دوران مرکزی جانچ ایجنسی (این آئی اے) نے فرقہ وارانہ منافرت بھڑکانے اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام سے متعلق قانون کے مختلف دفعات کے تحت الزامات کا سامنا کررہے اسلامی مبلغ ڈاکٹر ذاکر نائک کے خلاف دوسرا نوٹس جاری کرکے انہیں 30مارچ کو پیش ہونے کے لئے کہا ہے۔ این آئی اے کے ایک سینئر افسر کے مطابق ذاکر نائک کے خلاف پہلے بھی نوٹس جاری کیا گیا تھا۔ جس میں ان سے 14مارچ کو ایجنسی کے سامنے حاضر ہونے کے لئے کہا گیا تھا۔
اس تاریخ پر ذاکر نائک این آئی کے سامنے حاضر نہیں ہوئے جس کے بعد انہیں دوسرا نوٹس جاری کرکے 30مارچ تک این آئی اے ہیڈکوارٹر میں پیش ہونے کے لئے کہا گیا ہے۔ ڈاکٹر ذاکر پر فرقہ وارانہ جذبات بھڑکانے اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام قانون کے مختلف دفعات کے تحت گذشتہ سال نومبر میں ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔ بنگلہ دیش کی راجدھانی ڈھاکہ میں گذشتہ سال ہوئے دہشت گردانہ حملے کے بعد ڈاکٹر نائک کی سرگرمیوں پر شبہ ظاہر کیا گیا تھا۔

Title: nia issues new notice to zakir naik | In Category: ہندوستان  ( india )