ہندوستانی کمیونسٹ پارٹی کی طلاق ثلاثہ پر پرسنل لا بورڈ کے موقف پر کڑی تنقید

نئی دہلی: کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا(سی پی آئی) نے تین طلاق کے معاملے میں مسلم پرسنل لا بورڈ کے موقف پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اسے کسی بھی طور پر جائز نہیں ٹھہرایا جا سکتا۔پارٹی نے آج یہاں جاری ہونے والے بیان میں کہا ہے کہ ایک نشست میں یا باالفاظ دیگر بیک وقت تین بار طلاق، طلاق، طلاق کہہ دینا نہ تو قرآن سے ثابت ہے اور نہ ہی قانون اس کی حمایت کرتا ہے۔ یہ اخلاقی طورپر بھی ٹھیک نہیں ہے، اس لئے اسے ختم کیا جانا چاہئے۔ تاہم، پارٹی نے یہ بھی کہا کہ چونکہ یہ ایک مذہبی معاملہ ہے اس لیے حکومت کو کسی مذہب کے معاملے میں مداخلت نہیں کرنی چاہئے۔ ریلیز میں کہا گیا ہے کہ مسلم معاشرے میں بہتری کی بات اس طبقہ کے اندر ہی آنی چاہئے ، نہ کہ حکومت کو مداخلت کرنی چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ یکساں سول کوڈ کے معاملے پر قومی بحث ہونی چاہئے اور اس میں صرف ایک مذہب کے بارے میں بات نہیں ہونی چاہئے بلکہ تمام مذاہب کے لوگوں کو شامل کیا جانا چاہئے۔ پارٹی نے کہا ہے کہ مسلم پرسنل لا بورڈ کو چاہئے کہ وہ اس مسئلے کے تمام پہلوؤں پر بات کرے تبھی انصاف ممکن ہو پائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو چاہئے کہ یکساں سول کوڈ کے مسئلے پر بحث سے پہلے ضابطہ اخلاق سے متعلق کوئی تجویز تو لائے، اس کے بعد ہی اس مسئلے پر بات ہوگی۔

Title: cpi oppose triple talaq | In Category: ہندوستان  ( india )
Tags: ,