راجستھان میں لو جہاد کے نام پر ایک شخص کو بے رحمی سے پیٹا اور پھر زندہ جلا دیا گیا

نئی دہلی: راجستھان کے راج سمند میں دیو ہریٹیج روڈپر واقع دیو نگر علاقہ میں انسانیت کو شرمسار کردینے والی ایک واردات منظر عام پرآئی ہے جس میں مغربی بنگال کے ایک مسلمان کو مبینہ طور پرلوو جہاد کے معاملہ میں زندہ جلا دیا گیا۔ یہی نہیں بلکہ حملہ آوروں نے اسے بری طرح پیٹنے اور پھر اس کو زندہ جلا دینے کا ویڈیو بنا کر اسے سوشل میڈیا پر بھی ڈال دیا۔ پولس نے اس کی شناخت 48سالہ محمد افروزل کے طور پر کی ہے۔راج نگر تھانہ کے ایس ایچ او رام سمیر مینا کے مطابق اس کی ادھ جلی لاش بدھ کو رات ایک بجے سڑک کے کنارے پڑی پائی گئی۔ سی این این نیوز کے مطابق محمد افرازل مغربی بنگال کے مالدہ ضلع کا رہائشی تھا اور راج سمند میں ٹھیکے پر مزدوری کر رہا تھا۔پولس کے مطابق شمنھو ناتھ نام کا ایک شخص اسے کام دلانے کے بہانے لے گیا اور اسے اس مقام پر لا کر کھیتی میں استعمال کیے جانے والے اوزاروں سے اسے پیٹ پیٹ کر بری طرح لہولہان کر دیا اور پھر پٹرول چھڑک کر اسے آگ لگا دی۔ اس کی بائیک اور چپلیں قریب ہی پڑی پائی گئیں۔راجستھا ن کے وزیر داخلہ گلاب چند کٹاریہ نے کہا کہ واقعہ کی تحقیقات کے لیے ایس آئی ٹی تشکیل دی گئی ہے اور اصل ملزم شنبھو ناتھ ریگڑ کو فرگتار کر لیا گیا ہے۔

Title: rajasthan labourer hacked to death cops start probe after video goes viral | In Category: ہندوستان  ( india )